لندن ( ایس ایم خان ) پاک سرزمین پارٹی برطانیہ کے قائم مقام صدر مرزا فیصل محمود نے کہاہے کہ پیپلزپارٹی کی سندھ حکومت کو مرتضی وہاب کو ایڈمنسٹریٹر کراچی لگانا بد نیتی کا منہ بولتا ثبوت ہے ۔ پیپلز پارٹی کی سندھ حکومت بلدیات کے سارے حقوق غصب کرنے کے بعد بلدیاتی الیکشن نا کرونا سندھ کے شہروں خصوصاً پاکستان کے سب سے بڑے شہر کراچی کو دنیا کا بدترین شہر بنانے کے بعد اس کی بنیادوں کو کھوکھلا کرنے کی ایک اور سازش ہے ۔ اب نیے ایڈمنسٹریٹر کراچی کے پاس ایسا کون سا آلہ دین کا چراغ ہے جو ان کے ایک اشارے سے اس عظیم شہر کراچی کے سارے مسئلے حل ہو جائیں گے جسے پیپلز پارٹی اور ایم کیو ایم کی حکومتوں نے مل کر تیرہ سال میں تباہ کیا ہو۔اور اب پیپلزپارٹی کے پاس ایسی کونسی گیڈر سنگی ہے وہ چند ماہ میں کراچی کو دنیا کا خوبصورت شہر بنا دینگے۔ اور نیے ایڈمنسٹریٹر کراچی مرتضیٰ وہاب کا یہ کہنا کہ وہ ایڈمنسٹریٹر کی ذمہ داری سنبھالنے کے بعد دیکھیں گے کہ کتنے مسائل ہیں ۔ مرزا فیصل محمود نے پیپلز پارٹی کی سندھ حکومت سے مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ فل فور بلدیاتی انتخابات انعقاد کروائیں تاکہ عوام کے مسائل لوکل نمائندوں حل کر سکیں۔, نمبر دو جو بلدیاتی محکمے سندھ حکومت نے لے لیے تھے جن میں واٹربورڈ,کراچی بلڈنگ اتھارٹی سمیت دیگر اداروں کو واپس بلدیہ عظمیٰ کراچی کو لوٹائے جائیں, کراچی کے سات ڈسٹرکٹ کو واپس آٹھاراں ٹاون میں انتظامی طور پر تقسیم کیا جائے اور این ایف سی ایوارڈ کی رقم پی ایف سی ایوارڈ کے طور پر یوسی لیول پر دی جائے ۔ تب ہی کہیں جا کر کنکریٹ بنیادوں پر کراچی کے مسائل حل ہونگے۔